112

میت کو قبر میں قبلہ رخ کرنا یاد نہ رہے تو کیا کیا جائے؟

میت کو قبر میں قبلہ رخ کرنا یاد نہ رہے تو کیا کیا جائے؟

میت کو قبر میں لِٹاتے وقت سنت یہ ہے کہ میت کے پورے بدن کو دائیں کروٹ پر قبلہ رخ لِٹایا جائے۔ (بدائع الصنائع، احکامِ میت) لیکن اگر میت کو قبر میں رکھنے کے بعد اسے قبلہ رخ کرنا یاد نہ رہے تو اگر میت کے اوپر صرف تختے ہی رکھے ہوں اور مٹی نہ ڈالی ہو تو ایسی صورت میں وہ تختے ہٹا کر میت کو قبلہ رخ کرلیا جائے، البتہ اگر مٹی بھی ڈال دی ہو تو اب میت کو قبلہ رخ کرنے کے لیے قبر کھولنا جائز نہیں۔
(رد المحتار، احکامِ میت)
اس سے یہ بات بھی سامنے آتی ہے کہ قبر کے تمام اعمال توجہ اور دھیان سے ادا کرنے چاہییں تاکہ کوئی اہم عمل رہ نہ جائے۔

⭕ تنبیہ:
بہت سے لوگ اس غلطی کا شکار ہیں کہ وہ میت کو قبر میں رکھنے کے بعد میت کو چت لٹا کر صرف اس کا چہرہ قبلہ رخ کرلیتے ہیں اور اسی کو درست سمجھتے ہیں بلکہ عرصہ دراز سے اسی طریقے پر عمل کرتے آرہے ہیں، حالاں کہ سنت طریقہ یہ ہرگز نہیں، بلکہ میت کو قبر میں لِٹاتے وقت سنت یہ ہے کہ میت کے پورے بدن کو دائیں کروٹ پر قبلہ رخ لِٹایا جائے۔ اس کی کچھ تفصیل بندہ کے اسی سلسلہ اصلاحِ اغلاط کے سلسلہ نمبر 7: (میت کو قبر میں لِٹانے کا سنت طریقہ) میں ملاحظہ فرمائیں۔

✍🏻۔۔۔ مفتی مبین الرحمٰن صاحب مدظلہ
فاضل جامعہ دار العلوم کراچی
محلہ بلال مسجد نیو حاجی کیمپ سلطان آباد کراچی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں