87

شادی کے موقع پر لوگوں کو دعوت دینے کیلئے شادی کارڈ بنواتے ہیں، شرعاً اس کی کیا حیثیت ہے؟

سوال

آج کل لوگ شادی کے موقع پر لوگوں کو دعوت دینے کیلئے شادی کارڈ بنواتے ہیں، شرعاً اس کی کیا حیثیت ہے؟

جواب: واضح رہے کہ شادی کے موقع پر شریعت نکاح کے اعلان کا حکم دیتی ہے، اگر شادی کارڈ اسی مقصد کیلئے بنائے جائیں، تو جائز ہے، محض ریا اور فخر مقصود ہو یا اس کے بنانے میں اسراف (فضول خرچی) ہو، تو اس سے اجتناب ضروری ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کما فی القرآن الکریم:

یٰاَیُّہَا الَّذِیْنَ اٰمَنُوْا لَا تُبْطِلُوْا صَدَقٰتِکُمْ بِالْمَنِّ وَ الْاَذٰی ۙ کَالَّذِیْ یُنْفِقُ مَالَہٗ رِئَآءَ النَّاسِ وَ لَا یُؤْمِنُ بِاللّٰہِ وَ الْیَوْمِ الْاٰخِرِؕ۔

(سورة البقرة، الآیۃ: ٢٦۴)

وفی تفسیر روح المعانی تحت ھذہ الآیة: وفیہ تعریض بان کلا من الریاء، والمن والاذی علی الانفاق من صفات الکفار، ولابد للمومنین ان یجتنبوھا۔

(ج: ٣، ص: ٣۵)

وفی جامع الترمذی:

عن عائشة رضی اللہ عنہا قالت: قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم: اعلنوا ھذا النکاح، واجعلوا فی المساجد، واضربوا علیہ بالدف۔

(باب فی اعلان النکاح، ج: ١، ص: ٢٠٧)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں