97

حالتِ اِحرام میں فوت ہوجانے کی صورت میں تجہیز وتکفین کا طریقہ:

حالتِ اِحرام میں فوت ہوجانے کی صورت میں تجہیز وتکفین کا طریقہ:
میت کے غسل، کفن اور دفن کے مسائل میں حالتِ اِحرام اور عام حالت میں کوئی فرق نہیں، اس لیے جو شخص حج یا عمرہ کے لیے گیا ہو اور وہ احرام ہی کی حالت میں فوت ہوجائے تو اس کے غسل، کفن اور دفن کا وہی طریقہ ہے جو کہ عام میت کا ہے، کیوں کہ موت آنے کی وجہ سے اس کا احرام ختم ہوجاتا ہے، اب اس پر احرام کے احکام اور اس کی پابندیاں لاگو نہیں ہوتیں، اس لیے ایسی میت کا سر ڈھانکنے اور اس کے جسم پر خوشبو لگانے جیسے احکام وآداب سب اسی طرح ہوں گے جس طرح عام میت کے ہوتے ہیں۔ (احکامِ میت بابِ دوم، رد المحتار)

☀ الفتاوى الهندية:
والمحرم وغیر المحرم في ذلك سواء یطیب ویغطی رأسه. (كتاب الصلاة: باب في الجنائز)

✍🏻۔۔۔مفتی مبین الرحمٰن صاحب مدظلہ
فاضل جامعہ دار العلوم کراچی
محلہ بلال مسجد نیو حاجی کیمپ سلطان آباد کراچی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں