98

قربانی سے چند دن پہلے جانور خریدنا افضل ہے

قربانی سے چند دن پہلے جانور خریدنا افضل ہے

☆۔۔۔ بہتر یہ ہے کہ قربانی سے چند دن پہلے جانور کو گھر میں رکھ کر خوب کھلائے پلائے اور خاطر مدارات کرے ، لیکن اس کے گلے اور پیروں میں بلاضرورت گھنٹیاں گھنگرو نہ پہنائے، اسی طرح فضول نمود و نمائش میں پیسہ خرچ نہ کرے۔
☆۔۔۔ قربانی کے جانور کی تصویر اتارنا، مارنا پیٹنا، کھانے پینے ، گرمی سردی کا خیال نہ رکھنا یا کسی قسم کی تکلیف پہنچانا گناہ ہے، اسی طرح اپنی بڑائی ظاہر کرنے کے لئے خواہ مخواہ لوگوں کو دکھلاتے پھرنا بھی گناہ کی بات ہے۔ البتہ اخلاص کے ساتھ قربانی کے جانور کی خاطرتواضع کے لئے چہل قدمی کرانا اور گھمانا پھرانا جائز ہے۔

📚حوالہ:
☆ بدائع الصنائع 5/78
☆ المحیط البرھانی 8/125
☆ الاحتیار لتعلیل المختار 1/174
☆ قربانی کے فضائل و احکام 272

خریدے بغیر جائز مملوکہ جانور کی قربانی کا حکم
جو جانور خریدے بغیر کسی اور جائز طریقہ سے ملکیت میں آجائے مثلا کسی دوسرے شخص نے اپنی خوشی سے ہدیہ کردیا، یا اپنی طرف سے احسانا قیمت ادا کردی، اور جانور اس کے حوالے کیا، تو بھی اس جانور کی قربانی جائز ہے، خود جانور خریدنا یا اپنی جیب سے قیمت ادا کرنا ضروری نہیں ہے۔

ادھار خریدے ہوئے جانور کی قربانی کا حکم
اگر کسی شخص کے پاس نقد پیسے نہ ہو اور وہ قربانی کے لیے ادھار جانور خریدلے یا قسطوں پر کوئی جانور خریدلے ، تو اس جانور کی قربانی بھی جائز ہے، قیمت بعد میں بھی ادا کی جاسکتی ہے، لیکن بلاضرورت ادھار کرنا اچھا نہیں۔

📚حوالہ:
☆ بدائع الصنائع کتاب التضحیہ 5/77
☆کشف الاسرار باب الامر 155
☆ فتاوی قاضی خان 3/213
☆ قربانی کے فضائل و احکام 274

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں