114

حرام آمدنی والے کی قربانی کے جانور میں شرکت

سوال
کیاقربانی کے جانور میں سودی بینک میں کام کرنے والے کا حصہ ڈالنا درست ہے جب کہ ذریعہ آمدنی بینک کی تنخواہ ہو ؟

جواب
قربانی میں اگرکوئی حرام آمدن والا حصہ دار شامل ہو، مثلاً:  بینک کا کوئی ملازم یا انشورنس کا کاروبار کرنے والا شریک ہو  جس کا ذریعہ آمدنی  صرف حرام ہو، یا اس  کی غالب آمدنی حرام ہو تو شرکاء میں سے کسی کی بھی  قربانی نہیں ہو گی، اس لیے حرام آمدن والے کو قربانی میں شریک نہ کیا جائے۔فقط واللہ اعلم

فتوی نمبر : 143909201645

دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں